Jadid Khabar

ترکی کی بمباری سے شام کے عفرین میں 13 ہلاک

Thumb

بیروت، 6 مارچ (رائٹر) ترکی کی جانب سے کی گئی فائرنگ اور ہوائی حملوں میں شام کے عفرین علاقے میں واقع جاندرس شہر میں 13 افراد کی موت ہو گئی۔ جنگ پر نگرانی رکھنے والے ایک گروپ نے مرنے والوں کی تعداد 22 ہونے کا دعوی کیا ہے ۔کردش ملیشیا نے اطلاع دیتے ہوئے بتایا کہ ترکی کی جانب سے کل یہ حملہ کیا گیا۔وائی پی جی کو دہشت گرد تنظیم اور کردش دہشت گردی کا توسیع ماننے والے ترکی نے جنوری سے عفرین علاقے میں اس تنظیم کو باہر نکالنے کے لئے مہم شروع کی ہوئی ہے ۔شامی کردش وائی پی جی ملیشیا کے ترجمان روزھاٹ روز نے بتایا''حملوں میں تین بچوں سمیت 13 افراد ہلاک ہو گئے ''۔اس نے بتایا کہ راجو گا¶ں اور علاقے کے اہم شہر عفرین کے درمیان کی گئی ترکی کی بمباری میں 22 شہری زخمی ہو گئے ۔برطانیہ واقع مانیٹرنگ گروپ سیرین آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس نے کہا کہ ترکی کے زبردست فضائی حملہ میں 17 افراد ہلاک اور 92 دیگر زخمی ہو گئے تھے ۔ بہت سے لوگ ملبے کے نیچے دبے ہیں جس سے ہلاک شدگان کی تعداد بڑھنے کا امکان ہے ۔ترکی نے شمال مغربی شام کے عفرین علاقے میں اپنی مہم کے دوران عام شہریوں کو مارے جانے سے صاف انکار کرتا رہا ہے ۔انقرہ میں ترکی کے نائب وزیر اعظم اور حکومت کے اہم ترجمان بکیر بوزداگ نے ایک پریس کانفرنس میں بتایا کہ ترکی شام میں شہریوں کو نقصان نہیں پہنچا رہا ہے ۔ انہوں نے اس سلسلہ میں لگائے گئے تمام الزامات کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ ترکی فوج شہریوں اور دہشت گردوں کے درمیان فرق کرنے کی اہل ہے ۔

Ads