Jadid Khabar

صومالی عسکریت پسندوں کا حملہ‘7فوجی جوان ہلاک

Thumb

موغا دیشو،7دسمبر (ایجنسی) صومالی فوجی ذرائع کے مطابق دارلحکومت موگادیشو میں جمعرات کے روز کو ہونے والے بارودی سنگ دھماکے میں دو جرنیلوں سمیت پانچ فوجی ہلاک ہو گئے۔ دھماکے کی ذمہ داری القاعدہ سے متاثر ’’الشباب موومنٹ‘‘ نے قبول کی ہے۔فوج کے بارھویں بریگیڈ کے سربراہ جنرل عمر عدنان حسن اور اسی بریگیڈ کے آپریشنل کمانڈر جنرل عبدی علی جمامی ہلاک ہونے والوں میں شامل ہیں۔صومالی ایوان صدر سے جاری ہونے والے بیان میں ان تمام افراد کو شاندار خراج عقیدت پیش کیا گیا ہے جنہوں نے ’’ملک میں امن کی بحالی کی جدوجہد میں اپنی جان قربان کر دی۔‘‘ہلاک ہونے والے افسر اور جوان جنوبی ساحلی سڑک پر واقع ایک فوجی اڈے کے دورے سے واپس آ رہے تھے کہ جب راستے میں نصب بارودی سرنگ ان کی گاڑی کے قریب دھماکے سے پھٹ گئی۔صومالی فوج کے ترجمان محمد عدن نے ’’اے ایف پی‘‘ خبر رساں ایجنسی کو بتایا کہ ’’دہشت گردوں نے سڑک کے کنارے دھماکا خیز مواد نصب کر رکھا تھا جس کا ہدف جنرل عمر کو لیجانے والی گاڑی تھی۔‘‘ایک اور فوجی ترجمان عبداللاہی احمد کے مطابق دونوں افسر جس پک اپ ٹرک پر سوار تھے اس میں سوار جوانوں کی بڑی اکثریت ہلاک ہو گئی۔ بارودی سرنگ دھماکے میں دو افراد زخمی بھی ہوئے۔القاعدہ سے منسلک الشباب گروپ نے بارودی سرنگ حملے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔ یہ تنطیم صومالیہ کی بین الاقوامی طور پر تسلیم شدہ حکومت کے خلاف گذشتہ دس برسوں سے برسرپیکار ہے۔

Ads