Jadid Khabar

مجھے میری مرضی کے خلاف پاکستان چھوڑنا پڑا: سیف الملوک

Thumb

ہیگ, 6 نومبر (یواین آئی) پاکستان میں توہین رسالت کے الزامات کا سامنا کر رہی عیسائی خاتون آسیہ بی بی کے وکیل سیف الملوک نے کہا ہے کہ انہیں ان کی زندگی کی سلامتی کے لئے ہالینڈ بھاگنا پڑا اور انہیں پتہ نہیں ہے کہ ان کی موکلہ اس وقت کہاں ہے ؟مسٹر سیف نے پیر کو یہاں صحافیوں کو بتایا ہے کہ میری مرضی کے خلاف کے اقوام متحدہ نے مجھے پاکستان سے باہر نکالا کیونکہ وہاں میرے جان کو خطرہ تھا۔ انہوں نے بتایا کہ پاکستان کی سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد بھڑکے تشدد کو دیکھتے ہوئے میں نے اسلام آباد میں اقوام متحدہ کے حکام سے رابطہ کیا، اس کے بعد وہ لوگ اور اسلام آباد واقع یوروپی ممالک کے سفیروں نے مجھے تین دن اپنے پاس رکھا اور میری مرضی کے خلاف مجھے ایک ہوائی جہاز میں بیٹھا دیا۔انہوں نے کہا کہ میں نے مشتعل ہجوم سے اپنی زندگی کی سلامتی کے لئے پاکستان چھوڑا کیونکہ مجھے اپنے خاندان کی حفاظت کی فکر تھی۔قابل ذکر ہے کہ پاکستان کی سپریم کورٹ نے 31 اکتوبر کو آسیہ بی بی کو توہین رسالت کے الزامات سے بری کر دیا تھا، جس کے خلاف شدت پسند سڑکوں پر اتر آئے تھے اور آسیہ بی بی کو پھانسی دینے کی مانگ پر زبردست ہنگامہ کیاتھا۔

Ads