Jadid Khabar

خشوگی کی لاش کو ٹکڑے کرکے پانچ سوٹ کیسوں میں رکھا گیا تھا

Thumb

انقرہ، 5 نومبر (یواین آئی) صحافی اور سعودی عرب کے شہزادہ محمد بن سلمان کے ناقد جمال خشوگي کا گزشتہ ماہ قتل کرنے کے بعد ان کے جسم کے ٹکڑے کرکے پانچ سوٹ کیسوں میں رکھا گیا تھا۔انقرہ سے شائع اخبار 'صبا' نے نامعلوم حکام کے حوالہ سے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ ان سوٹ کیسوں کو دو اکتوبر (مسٹر خشوگي کے قتل والے دن) کو سعودی عرب کے سفارت خانے کے قریب واقع قونصل جنرل کی رہائش پرلے جایا گیا۔حکام نے بتایا کہ مسٹر خشوگي کے جسم کو کاٹنے اور اسے سفارت خانے کے احاطے سے ہٹانے والے 15 ارکان میں شریف ماہر مطرب، صلاح طبیغی اور ثعار الحربی اہم ہیں. ان میں سے مطرب محمد بن سلمان کامعاون ہے ، جبکہ طبیغی سعودی عرب کے فورنسک سائنس کونسل کا سربراہ اور فوج میں کرنل ہے ۔ الحربی کو گزشتہ سال جہادی حملہ کے دوران بہادری سے شاہی محل کی حفاظت کی وجہ سے لیفٹیننٹ کے طور پر ترقی دی گئی تھی۔قابل ذکر ہے کہ صبا کی یہ رپورٹ ترکی کے صدر طیب اردگان کے اس بیان کے دو دن بعد آیا ہے جس میں انہوں نے کہا تھا کہ مجھے یقین ہے کہ صحافی کے قتل کا حکم سعودی عرب کی اعلی ترین سطح سے آیا۔

Ads