Jadid Khabar

سی پی ایم نے بھی اکبر کا استعفیٰ مانگا

Thumb

نئی دہلی، 11اکتوبر (یو این آئی) کانگریس کے بعد اب مارکسی کمیونسٹ پارٹی(سی پی ایم) نے بھی جنسی استحصال کے معاملے میں گھرے خارجہ کے وزیرمملکت ایم جے اکبر کے استعفی کا مطالبہ کیا ہے ۔پارٹی پولٹ بیورو نے آج یہاں جاری ایک بیان میں کہاکہ اب تک مجموعی طورپر 9خواتین نے مسٹر اکبر پر جنسی استحصال کا الزام لگایا ہے ۔ یہ واقعات اس وقت کے ہیں جب وہ اخبارات کے ایڈیٹر تھے ۔ پارٹی کا کہنا ہے کہ ایک مرکزی و زیر پر اس طرح کے الزام لگنے کے بعد ان کا حکومت میں رہنا ناقابل قبول ہے ۔ انہیں اپنے عہدہ سے استعفی دے دینا چاہئے ۔اس درمیان خبر ہے کہ حکومت نے مسٹر اکبر کو اپنا بیرون ملک دورہ کے درمیان میں ہی چھوڑکر ملک واپس آنے کے لئے کہا ہے ۔ ذرائع کے مطابق مسٹر اکبر سے ان الزامات کے بارے میں حقیقت معلوم کرنے کے بعد ہی ان کے خلاف کوئی فیصلہ کیا جائے گا۔مسٹر اکبر کے ساتھ اخبارات میں کام کرنے والی خواتین صحافیوں نے جنسی استحصال کے اپنے پرانے تجربات کے سوشل میڈیا میں سامنے آنے سے ہنگامہ مچ گیا ہے ۔ گزشتہ دنوں اداکارہ تنوشری دتہ کے نانا پاٹیکر پر لگائے جنسی استحصال کے الزامات کے بعد می ٹو تحریک نے زور پکڑ لیا ہے اور متاثرہ خواتین سوشل میڈیا پر آپ بیتی لکھ کر مردوں کو بے نقاب کررہی ہیں۔وزیر خارجہ سشما سوراج اور وزیر قانون روی شنکر پرساد نے مسٹر اکبر کے معاملے پر خاموشی اختیار کرلی ہے ۔ اس درمیان اکھل بھارتیہ جنوادی مہیلا سمیتی نے کام کرنے کی جگہ پر خواتین کے جنسی استحصال معاملہ پر جمعہ کو جنتر منتر پر مظاہرہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ سمیتی نے جنسی استحصال کے معاملات کی جانچ کرانے اور قصوروار مردوں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ہے ۔

Ads