Jadid Khabar

برطانیہ کا سعودی عرب سے خشوگی کی گمشدگی پر جواب طلب

Thumb

لندن، 10 اکتوبر (یواین آئی) برطانیہ نے بھی سعودی عرب کے لاپتہ صحافی جمال خشوگي کے استنبول واقع اس کے قونصل خانے سے باہر نکلنے کے ثبوت پیش کرنے کا چیلنج کیا ہے اور ان کے (مسٹر خشوگي کے ) لاپتہ ہونے کے سلسلے میں فوری جواب دینے کو کہا ہے ۔ اس سے ایک دن پہلے ترکی نے بھی سعودی عرب کو ایسا ہی چیلنج کیا تھا۔برطانیہ کے وزیر خارجہ جیریمی ہنٹ نے منگل کو ٹوئٹ کیا''مسٹر جمال خشوگي کی گمشدگی اور قتل پر فوری جواب کے لئے سعودی سفیر سے ملاقات کی ہے ۔ دنیا بھر میں صحافیوں کے خلاف تشدد میں اضافہ ہواہے اور یہ آزادی اظہار کے لئے ایک سنگین خطرہ ہے ۔ اگر میڈیا رپورٹ صحیح ثابت ہوتی ہے ، تو ہم اس واقعہ کو سنجیدگی سے لیں گے - دوستی مشترکہ اقدار پر منحصر ہے ''۔بی بی سی نیوز کی رپورٹ کے مطابق اس معاملہ میں امریکی ٹرمپ انتظامیہ سے زیادہ سخت رخ اپناتے ہوئے برطانیہ کے محکمہ خارجہ کے ایک ترجمان نے کہا کہ اگر اس معاملے میں میڈیا رپورٹ صحیح ثابت ہوتے ہیں تو برطانیہ اس واقعہ کو 'انتہائی سنجیدگی' سے لے گا۔اس سے پہلے امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے کہا کہ صحافی کی گمشدگی کے سلسلہ میں ابھی تک سعودی حکام سے بات چیت نہیں کی ہے لیکن وہ ایسا جلد ہی کریں گے ۔ انہوں نے کہا''مجھے اب اس کے بارے میں کوئی معلومات نہیں ہے ''۔ خیال ر ہے کہ سعودی شہری مسٹر خشوگی گذشتہ دو اکتوبر کو استنبول میں سعودی قونصل خانے میں جانے کے بعد سے لاپتہ ہیں۔ ترکی کے انکوائری حکام کا ماننا ہے کہ ایک سال سے امریکہ میں ازخود مہاجرت کی زندگی گزار نے والے 'واشنگٹن پوسٹ' کے صحافی جمال خشوگي کا قتل ہوا ہے جس میں سعودی عرب کا ہاتھ ہے ۔سعودی عرب اگرچہ ان الزامات سے صاف انکار کرتا ہے ۔اس درمیان ترکی نے کہا ہے کہ وہ استنبول واقع سعودی کے قونصل خانے کی تلاشی لے گا اور تحقیقات کرے گا۔

Ads