Jadid Khabar

چندرابابونائیڈوکے خلاف گرفتاری وارنٹ جاری

Thumb

ممبئی، 14 ستمبر(ایجنسی)مہاراشٹرکے دھرمابادعدالت نے 2010 میں ٹی ڈی پی کے بینرتلے ایک احتجاج کیلئے وزیراعلی این چندربابونائیڈو ، آبپاشی کے وزیر اور 14 دیگر کے خلاف ایک گرفتاری وارنٹ جاری کیا ہے ۔ ٹی ڈی پی وفود نے گوداوری ندی پر بابلی پروجیکٹ کی تعمیر پر احتجاج کیا تھا۔ ناندیڑ ضلع میں دھرماباد کی پہلے درجے کی مجسٹریٹ عدالت کے جج این آر گاج بھیے نے یہ حکم جاری کیا ہے اور پولیس کو21 ستمبر کو عدالت میں تمام ملزموں کو گرفتار کرکے پیش کرنے کی ہدایت دی ہے۔دریںاثناء واقعے پر سخت ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے ٹی ڈی پی ترجمان لنکا دیناکرن نے بی جے پی حکومت کی سخت تنقید کرتے ہوئے الزام عائد کیا کہ یہ وزیراعظم نریندرمودی اور بی جے پی صدر امت شاہ کی کچھ سازش ہے۔ دیناکرن نے کہاکہ یہ بدقسمتی کی بات ہے کہ آندھراپردیش کے وزیراعلی این چندرابابو نائیڈ کے خلاف گرفتاری وارنٹ جاری کیا گیا ہے ۔ اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ کچھ سازش کی گئی ہے۔ عدالت کے احکامات کا حوالہ دیتے ہوئے نائیڈو کے بیٹے اور ریاستی اطلاعاتی ٹیکنالوجی کے وزیر این لوکیش نے کہاکہ ان کے والد اور دیگر ٹی ڈی پی لیڈران عدالت میں حاضر ہوں گے ۔ انہوں نے تلنگانہ کے مفادات کے تحفظ کیلئے لڑائی لڑی۔ انہوں نے گرفتاری کے وقت ضمانت لینے سے بھی انکار کیا ہے۔ واضح رہے کہ 2010 میں نائیڈو اور دیگر جب متحدہ آندھراپردیش میں اپوزیشن میں تھے توانہیں گرفتار کیا گیا اور مہاراشٹر میں بابلی پروجیکٹ سائٹ پر احتجاج کیلئے پونے کی ایک جیل میں بند کیا گیا۔ ٹی ڈی پی لیڈران نے اس پروجیکٹ کی مخالفت کی تھی ۔ اس بنیاد پر کہ اس سے پسماندہ افراد متاثر ہوں گے۔ 

Ads