Jadid Khabar

تاج محل پر مالکانہ حق کس کا،تین ماہ بعد سپریم کورٹ کا فیصلہ

Thumb

نئی دہلی،10جولائی(ایجنسی) تاج محل کا مالکانہ حق کس کاہے،اس کا جواب فی الحال کسی کے پاس نہیں ہے۔ سپریم کورٹ میں اس معاملے کی سماعت تین مہینے بعدہوگی۔واضح رہے کہ سنی سینٹرل وقف بورڈ سپریم کورٹ میں دعوی کرچکا ہے کہ تاج محل پر ان کا مالکانہ حق ہے، اگرچہ ان کے پاس کوئی ثبوت نہیں ہے۔ وقف بورڈ کا کہنا ہے کہ تاج محل ان کی جائیداد ہے۔وقف بورڈ نے ساتھ یہ بھی کہا کہ تاج محل آل مائٹی سرو شکتی مان کی جائیداد ہے۔ لہذا کوئی بھی انسان اس پر اپنا مالکانہ حق نہیں جتا سکتا ہے۔ ہم بھی اس کو مالکانہ حق نہیں مان رہے ہیں۔دریں اثناء عدالت کا  اس معاملے پر یہ کہنا تھا کہ اگر آپ کسی جائیداد وقف کااعلان کرتے ہیں توآپ اس کا جائزہ لے سکتے ہیں۔ عدالت نے اے ایس آئی کو بھی بتایا تھا کہ وہ اگلے سماعت میںبتائیں کہ جو سہولیات وقف کو دی جا رہی ہیں وہ اب بھی جاری ہیں یا نہیں۔ دوسری طرف اے ایس آئی نے وقف کے تاج محل پراپنے دعوے کی مخالفت کی۔ اے ایس آئی نے سپریم کورٹ میں کہا کہ اگر تاج محل کو وقف بورڈ کی جائیداد مانتے ہیں تو کل کو وہ لال قلعہ اور فتح پور سکری پربھی اپنا دعوی کریں گے۔ وہیں اس سے پہلے عدالت کہہ چکا ہے کہ ملک میںیہ کون اعتماد کرے گاکہ تاج محل وقف بورڈ کی ملکیت ہے۔ اس طرح کے معاملوں سے سپریم کورٹ کا وقت ضائع وبرباد نہیں کرنا چاہئے۔

Ads