Jadid Khabar

گورنر ہاوس پر پر کجریوال اور دیگر وزراءکا دھرنا جاری

Thumb

نئی دہلی 12 جون (یو این آئی) دہلی کے نوکرشاہوں کیخلاف کارروائی کے سلسلہ میں گورنر ہاس پر وزیر اعلی اروند کجریوال اور ان کی کابینہ کے ساتھیوں کا دھرنا گزشتہ 15 گھنٹے سے جاری ہے ۔مسٹر کجریوال،نائب وزیر اعلی منیش سسودیا، وزیر صحت ستیندر جین اور وزیر محنت گوپال رائے پیر کو لیفٹیننٹ گورنر انل بیجل سے ملاقات کرنے گئے تھے اور اپنے تین مطالبات کے قبول کرنے کی مانگ کو لے کر بعدمیں گورنر ہاس میں ہی دھرنے پر بیٹھ گئے ۔ چاروں نے رات گورنر ہا¶س کے ویٹنگ روم میں گزاری۔وزیر اعلی کا کہنا ہے کہ لیفٹیننٹ گورنر جب تک ہڑتال جیسی صورتحال بنانے والے نوکرشاہوں پر کارروائی نہیں کریں گے وہ یہاں سے نہیں جائیں گے ۔ مسٹر کجریوال نے منگل کو ٹویٹ کرکے کہا "میرے پیارے دہل کے لوگوں ، صبح کا سلام ، جدوجہد جاری ہے ''۔ایک اور ٹویٹ میں انہوں نے لکھا''سر یہ پڑھیں۔ آپ آئی اے ایس افسران کی ہڑتال کا یہ کہہ کر حمایت کر رہے ہیں کہ وہ کام پر ہیں اور ہڑتال پر نہیں ہیں۔ وہ کیا کام کر رہے ہیں. آپ ان کے طرز عمل کا کس طرح دفاع کر سکتے ہیں''۔نائب وزیر اعلی نے ٹوئیٹر پر لکھا "ہمارے اسکولوں میں سفیدی اور رنگائی وغیرہ کام گرمی کی چھٹیوں میں ہونا تھا. اس بار آپ کے آئی اے ایس افسران کی ہڑتال کے سبب یہ کام شروع ہی نہیں ہوا''۔دہلی کے چیف سکریٹری انشو پرکاش کے ساتھ تقریبا چار ماہ پہلے وزیر اعلی کی سرکاری رہائش گاہ پر مبینہ مارپیٹ کو لے کر حکومت اور حکام میں کشیدگی چل رہی ہے ۔یہ مقدمہ عدالت میں بھی چل رہا ہے ۔ وزیر اعلی آئی اے ایس افسران پر کارروائی کا مطالبہ کر رہے ہیں۔ ان کا الزام ہے کہ لیفٹیننٹ گورنر اس معاملے میں صحیح موقف نہیں اپنا رہے ہیں۔حکام کے اس اقدام کی وجہ سے حکومت کا کام کاج بری طرح متاثر ہو رہا ہے ۔ دوسری طرح لیفٹیننٹ گورنر نے وزیر اعلی اور ان کے ساتھی وزراءکے بلا وجہ دھرنے پر بیٹھنے کو غلط بتایا ہے . لیفٹیننٹ گورنر کا کہنا ہے کہ دہلی حکومت کے افسر ہڑتال پر نہیں ہیں اور وہ مسلسل حکام کے رابطے میں ہیں۔مسٹر سسودیا نے کہا کہ لیفٹیننٹ گورنر سے ہمارے تین مطالبے ہیں .. نوکر شاہوں کی غیر قانونی ہڑتال فوری طور پر ختم کروائیں کیونکہ سروس محکمہ کے سربراہ آپ ہیں۔ کام روکنے والے افسران کے خلاف سخت ایکشن لیں اور راشن کی دروازے پر ترسیل کے منصوبہ کو منظور کریں۔

Ads