Jadid Khabar

شام میں فوجی ہوائی اڈہ پر حملہ

Thumb

دمشق،9اپریل(یو این آئی)شام کی سرکاری میڈیا کے مطابق شام میں ایک فوجی ہوائی اڈے کو میزائل حملے سے نشانہ بنایا گیا ہے جس میں متعدد افراد زخمی ہوئے ہیں۔رپورٹ کے مطابق شام کا فضائی دفاعی نظام ایکٹیویٹ ہو گیا تھا۔شامی ٹیلی ویژن کا کہنا ہے کہ پیر کو صبح کے وقت حمس شہر میں ٹی 4 ایئر بیس کے قریب دھماکوں کی آواز سنی گئی۔خبر رساں ادارہ ثنا کے مطابق 'تیفور ایئر پورٹ کو متعدد میزائلوں سے نشانہ بنایا گیا ہے ۔ان اطلاعات کی آزاد ذارئع سے تصدیق نہیں ہو پائی ہے ۔یہ خبریں ایک ایسے وقت میں سامنے آئی ہیں جب شام کے شہر دوما میں مبینہ طور پر زہریلی گیس کے حملے میں کم از کم 70 افراد کی ہلاکت پر عالمی برادری کو تشویش لاحق ہے ۔مبینہ طور پر زہریلی گیس کے حملے کے حوالے سے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ ''اس حملے کی بھاری قیمت ادا کرنی ہو گی''۔امریکی صدر نے ٹویٹ میں شام کے صدر بشار الاسد اور ان کے اتحادیوں روس اور ایران کو تنقید کا نشانہ بنایا۔بی بی سی کے مطابق توقع ہے کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل پیر کو ممکنہ طور پر اس معاملہ پر بحث کرے گی۔ اس کے 15 میں سے نو ارکان نے اس معاملے پر فوری اجلاس کا مطالبہ کیا تھا۔یوروپی یونین نے بھی بین الاقوامی برادری کی جانب سے فوری رد عمل کا مطالبہ کیا ہے ۔دوسری جانب شام اور روس دونوں اس کیمیائی حملے کا انکار کرتے ہیں۔دوسری جانب برطانیہ نے بھی اس حملہ کی فوری تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے جبکہ پوپ فرانسس نے کہا ہے کہ کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کا کوئی جواز نہیں ہے ۔وائٹ ہیلمٹس نامی امدادی کارکنوں کی ایک تنظیم نے ایک ویڈیو نشر کی ہے جس میں متعدد مردوں، عورتوں اور بچوں کی لاشیں دیکھی جا سکتی ہیں۔ ان میں سے کئی کے منھ جھاگ سے بھرے ہوئے ہیں۔تاہم ہلاکتوں کی تعداد کی آزادانہ تصدیق نہیں ہو سکی ہے ۔
درےںاثناءامریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے شام میں عام شہریوں پر ہوئے مبینہ کیمیائی حملے کو لے کر عراقی وزیر اعظم حیدر العبادی سے فون پر بات کی۔ وائٹ ہا س نے آج ایک بیان جاری کرکے اس کی اطلاع دی۔بیان کے مطابق دونوں رہنماں نے اسلامک اسٹیٹ کے خلاف متحد ہو کر لڑنے پر بھی بات کی۔ اس کے علاوہ ٹرمپ اور حیدرالعبادی نے اسلامک اسٹیٹ کے خلاف مہم کو تیز کرنے اور دیگر خطرات سے نمٹنے کے معاملہ پر بھی بحث کی۔ بات چیت کے دوران دونوں رہنماں نے دمشق میں کیمیائی حملے پر تشویش کا اظہار کیا۔
درےںاثناءامریکہ کے کئی افسران نے شام کے ہوائی اڈے پر امریکی فوج کی جانب سے فضائی حملے کی رپورٹوں کو مسترد کردیا ہے ۔شام کے سرکاری ٹیلی ویژن کی رپورٹ میں کہا گیا کہ امریکی فوج نے شامی شہر ہومز کے ٹی -4 ہوائی اڈہ پر حملے کیے ہیں۔ اس رپورٹ کے بعد امریکہ نے کہا کہ کل فضائی حملہ کی بات میں بالکل حقیقت نہیں ہے ۔امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کل کہا تھا کہ شام میں بغیر سوچے سمجھے کئے گئے کیمیائی حملے میں سینکڑوں افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔ مرنے والوں میں عورتیں اور بچے ہیں۔ روس اور ایران شام کے صدر بشار الاسد کو حمایت دینے کے ذمہ دار ہیں۔ انہیں اس کے لیے بڑی قیمت ادا کرنا پڑے گی ۔قابل غور ہے کہ شام میں باغیوں پر کیمیائی گیس کے حملے کی اطلاعات کے بعد امریکہ اور بہت سے دیگر ممالک کے اصرار پر اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی میٹنگ آج دوپہر بعد ہو سکتی ہے ۔

 

Ads